ملتان۔مرکزی تنظیم تاجران پاکستان کے مرکزی چیئرمین خواجہ سلیمان صدیقی، مرکزی سنیئر وائس چیئر مین شیخ اکرم حکیم، جنوبی پنجاب کے صدر شیخ جاوید اختر، ضلعی صدر سید جعفر علی شاہ، ملتان کے صدر خالد محمود قریشی،جنوبی پناب کے سنیئر نائب صدر حاجی ندیم قریشی، ملتان کے جنرل سیکرٹری مرزا نعیم بیگ میڈیا سے گفتگو کر رہے ہیں

ملتان ( ) مرکزی تنظیم تاجران پاکستان کے مرکزی چیئرمین خواجہ سلیمان صدیقی، مرکزی سنیئر وائس چیئر مین شیخ اکرم حکیم، جنوبی پنجاب کے صدر شیخ جاوید اختر، ضلعی صدر سید جعفر علی شاہ، ملتان کے صدر خالد محمود قریشی،جنوبی پناب کے سنیئر نائب صدر حاجی ندیم قریشی، ملتان کے جنرل سیکرٹری مرزا نعیم بیگ نے کہا ہے کہ جب تک بجلی کے فکس ظالمانہ ٹیکس کے خاتمے کے لئے حکومت نوٹیفیکیشن جاری نہیں کرتی تاجر برادری احتجاج جاری رکھے گی حکومت نے بجلی کے کمرشل و گھریلو بلوں پر ظالمانہ فکس ٹیکس ختم نہ کئے تو 17اگست کو ملک گیر پہیہ جام اورشٹرڈاؤن ہوگا اسی لئے حکمرانوں کے پاس اب بھی وقت ہے کہ وہ ہوش کے ناخن لے اور تاجر نمائندوں کے ساتھ کئے گئے مزاکرات میں معاملات کو خوش اسلوبی سے نپٹائے خواجہ سلیمان صدیقی نے مزید کہا کہ تاجر برادری ملکی معیشت کے استحکام کے لئے ہر ممکن اپنا کردار ادا رہی ہے لیکن افسوس کہ آئے روز بے جا ظالمانہ ٹیکسز نے ملتان سمیت ملک بھر کے 60لاکھ سے زائد چھوٹے تاجروں اور غریب طبقہ کو شدید مشکلات سے دوچار کرکے رکھ دیا ہے جو پہلے ہی معاشی بدحالی، بڑھتی ہوئی مہنگائی، بجلی، پٹرولیم مصنوعات، اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں آئے روز اضافے کی وجہ سے پریشانی کا شکار ہیں انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیر خزانہ کو زمینی حقائق کو مدنظر رکھتے ہوئے فیصلے کرنے چاہیئں نہ کہ آئی ایم ایف، ورلڈ بنک جو کہے فوری طور پر اس پر عملدر آمد کردیا جائے چاہے غریب قوم خودکشیوں پر ہی کیوں نہ مجبور ہو جائے فکس ٹیکس کے باعث غریب قوم نے اپنے گھروں کی اشیاء بیچ کر بجلی کے بلوں کی ادائیگی کی ہے اس سے بڑی بدقسمتی اور کیا ہوگی اسی لئے حکومت فوری طور پر فیکس ٹیکس کا خاتمہ کرے ایسا نہ ہو کہ حکومت کے خلاف نہ رکنے والی احتجاجی تحریک چل پڑے اور حکومت کے لئے اس کو سنبھالنا نہ ممکن ہو جائے انہوں نے اپنے مزید مطالبہ میں کہا کہ جائیداد کی خریدو فروخت پر بڑھائے گئے ٹیکسز کو کم کرتے ہوئے ایک فی صد اور نان فائلر کے لئے حکومتی غلطی سے پاس شدہ 7فی صد کو دوبارہ 4فی صد کیاجائے اجلاس میں عالمی منڈی میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں نمایاں کمی کرنے کے باوجود حکومتی سطح پر عوام کو حقیقی معنوں میں ریلیف دینے کے لئے عملی معنوں میں کوئی اقدامات نہیں کئے گئے اسی لئے حکومت پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بھی مزید کمی کا اعلان کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں