کرناٹک: ہندو انتہاپسندوں کے ہاتھوں مسلمان نوجوان کا بے رحمانہ قتل

بھارتی ریاست کرناٹک کے ضلع منگلورو میں ہندو انتہا پسندوں نے مسلمان نوجوان کو تیز دھار آلے سے قتل کر دیا۔

23 سالہ محمد فاضل کے بہیمانہ قتل کے بعد علاقے میں کشیدگی پھیل گئی اور حکام نے علاقے میں دفعہ 144 نافذ کردی، پولیس نے مسلمانوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ جمعہ کی نماز اپنے گھروں میں ادا کریں، کشیدہ صورتحال کے پیش نظر بڑے اجتماعات پر پابندی کے احکامات جاری کردیئے گئے ہیں۔

منگلورو کے پولیس کمشنر این ششی کمار کے مطابق 28 جولائی کی رات 8 بجے سورتکل کے کرشنا پورہ کٹی پلہ روڈ پر ایک 23 سالہ نوجوان پر چار پانچ نوجوانوں نے بے رحمی سے حملہ کیا۔ اسے فوری طور پر اسپتال لے جایا گیا جہاں اسکی موت کی تصدیق ہوگئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں