ملتان :نیشنل بزنس ڈویلپمنٹ پروگرام (NBDP) اورسمیڈا (SMEDA)کےاشتراک سےوویمن چیمبر آف کامرس اینڈانڈسڑی ملتان میں ون آن ون کنسلٹنسی ہیلپ ڈیسک کا انعقاد کیاگیا۔جس میں انٹرنیشنل ٹریڈایڈواٸزراینڈبزنس کنسلٹنٹ آصف شہزاد نےوویمن انٹرپرینیورز کوگاٸیڈکیا۔

ملتان ( )نیشنل بزنس ڈویلپمنٹ پروگرام (NBDP) اورسمیڈا (SMEDA)کےاشتراک سےوویمن چیمبر آف کامرس اینڈانڈسڑی ملتان میں ون آن ون کنسلٹنسی ہیلپ ڈیسک کا انعقاد کیاگیا۔جس میں وویمن انٹرپرینیورز کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔سیشن کےدوران جنوبی پنجاب کی انٹرپرینیورز کوانٹرنیشنل ٹریڈایڈواٸزراینڈبزنس کنسلٹنٹ آصف شہزاد نے خواتین کوامپورٹ اورایکسپورٹ کے مواقع بارے تفصیلی طورپر آگاہ کیا۔اس موقع پرانہوں نے خواتین کوبتایاکہ جنوبی پنجاب کے شہر ملتان سے خواتین دستکاروں کی ہاتھ سے بنی مصنوعات کی دنیا بھر میں مانگ ہےتاہم ضرورت اس امر کی ہے کہ ایمبراٸیڈری سمیت دیگر مصنوعات کو بہتر انداز میں ڈسپلے کرکے عالمی منڈی تک رساٸی دی جاٸے۔انہوں نے خواتین انٹرپرینیورز کوامپورٹ اور ایکسپورٹ میں حاٸل رکاوٹيں دور کرنے بارے مفید معلومات فراہم کی اوربتایاکہ ہوم بیسڈورکرز کی مہارت سے مستفید ہوکرملکی زرمبادلہ کمایاجاسکتاہےجنوبی پنجاب سمیت ملک بھر میں ہوم بیسڈ ورکرز کی مصنوعات کو عالمی منڈی تک باآسانی کے طریقہ کار بارے بھی بتایا۔انہوں نے خواتین کو اپنی پراڈکٹ کی بہترمارکیٹنگ کےلیےلاٸحہ عمل اپنانےورجدیدتقاضوں بارے بتایا۔خواتین انٹرپرینیورز کوامپورٹ ایکسپورٹ لاٸسنسنگ کے حوالےسے ڈاکومینٹیشن بارے بٕھی بریف کیاگیا۔انہوں نے خواتین کے کاروبارکوفروغ دینے کےلیےمختلف لاٸحہ عمل بارے بھی بتایاگیااورخواتین کاملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں