محکمہ پبلک ہیلتھ میں کروڑوں روپے کے گھپلوں کا اِنکشاف

(رحیم یار خان بیوروچیف ) محکمہ پبلک ہیلتھ میں کروڑوں روپے کے گھپلوں کا اِنکشاف، تعمیراتی منصوبوں میں ناقص میٹریل کے اِستعمال پر کارروائی کا مطالبہ .ٹھیکیداروں اور آفیسران بالخصوص XEN و SDO اور سب اِنجینئرز نے کرپشن کی اِس بہتی گنگا میں اشنان کیا ہے، تمام تر منصوبہ جات میں گزشتہ چار سال کی جانچ پڑتال کرائی جائے: فرحان بلالی
صدر ینگ لائرز فورم جنوبی پنجاب، کنوینئر اذانِ بلالی فائونڈیشن، چیف آرگنائزر اِنٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ احمد سجاد فرحان بلالی ایڈووکیٹ نے میڈیا اور پریس کے نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ پبلک ہیلتھ میں کروڑوں روپے کے گھپلوں کا اِنکشاف، تعمیراتی منصوبوں میں ناقص میٹریل کا اِستعمال، گٹر لائنز میں غیر معیاری اور کم حجم کا پائپ ڈالا گیا ہے، گٹروں کے ڈھکن کو آہنی کڑے نہیں لگائے گئے، پائپ کمرشل ڈالا گیا، سیوریج لائن بچھانے کےلئے کنکریٹ میٹریل کی بنیاد نہیں بنائی گئی، ٹینڈرز کی شرائط اور قواعد و ضوابط کی صریحی خلاف ورزی کی گئی ہے۔ ٹھیکیداروں اور آفیسران بالخصوص XEN و SDO اور سب اِنجینئرز نے کرپشن کی اِس بہتی گنگا میں اشنان کیا ہے۔ حالیہ اسکیمز میں سنی پل ابوظہبی کالونی میں جو لائن ڈالی گئی اِس کی واضح مثال ہے۔ علاوہ ازیں تمام تر منصوبہ جات میں گزشتہ چار سال کی جانچ پڑتال کرائی جائے۔ ڈائریکٹر ٹیکنیکل کمیٹی اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ اِس کی تحقیقات عمل میں لائے اور اعلیٰ سطحی اِنکوائری کراتے ہوئے ذِمہ داران کو قرار واقعی سزا دی جائے۔ وزیرِاعلیٰ پنجاب، ڈائریکٹر جنرل اینٹی کرپشن، سیکرٹری پبلک ہیلتھ، ڈائریکٹر اینٹی کرپشن بہاولپور اور ڈِپٹی ڈائریکٹر اینٹی کرپشن رحیم یار خان فوری طور پر ایکشن لیں اور ذِمہ داران کو نشانِ عبرت بنائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں