عوامی شکایات اور حساس اداروں کی نشاندہی

کبیروالا (تحصیل رپورٹر)
عوامی شکایات اور حساس اداروں کی نشاندہی پر ڈپٹی ڈی ایچ او کبیروالا ڈاکٹر وسیم حیات نے پل باگڑ پر غیر قانونی الشافی ہسپتال سیل کردیا،سیل کرنے کے دوران ہسپتال ملازمین کا ڈپٹی ڈی ایچ او کبیروالا اور اس کے عملے کے ساتھ بدتمیزی،ہسپتال میں ان کوالیفائیڈ ڈاکٹر نے آپریشن کیا تھا،رپورٹ ہیلتھ کیئر لاہور بھیج دی گئی،ہسپتال مالکان نے ہسپتال کو ڈی سیل کروانے کے لیے زور لگانا شروع کردیا۔تفصیل کے مطابق ڈپٹی ڈی ایچ او کبیروالا ڈاکٹر وسیم حیات نے مسلسل عوامی شکایات اور حساس اداروں کی نشاندہی پر پل باگڑ میں غیر قانونی الشافی ہسپتال کو سیل کردیا اور رپورٹ ہیلتھ کیئر لاہور بھیج دی،سیل کرنے کے دوران ہسپتال کے مالکان اشفاق،عثمان اور ندیم ملانہ نے ڈپٹی ڈی ایچ او کبیروالا ڈاکٹر وسیم حیات اور اسکے عملہ کے ساتھ بدتمیزی بھی کی اور کہا کہ آپ ہمارے ہسپتال کو کسی صورت سیل نہیں کر سکتے اگر سیل کیا تو ہم اپکے خلاف کارروائی کروائیں گے،ہسپتال میں ان کوالیفائیڈ ڈاکٹر آپریشن کرتا تھا،ہسپتال میں سابقہ دور میں ایک بچے کی ہلاکت بھی ہوچکی ہے ہسپتال انتظامیہ نے متاثرین کو راضی کرکے معاملہ خاموش کروایا دیا اس ہسپتال کو مکمل عملہ ان کوالیفائیڈ ہے جس کی وجہ سے یہ مذکورہ ہسپتال متعدد یار سیل بھی ہے،پل باگڑ کے اہلیان علاقہ محمد رمضان،پرویز،بابر علی،جنید رضا و دیگر نے میڈیا کو بتایا اس ہسپتال کی کافی شکایات متعدد بار افسران کو بھی بتا چکے ہیں کہ اس میں کوئی فرد بھی کوالیفائیڈ نہیں ہے سب ان کوالیفائیڈ ہیں،مریضوں کی جیبیں کاٹتے ہیں اور مرضی کے پیسے بٹورتے ہیں ادویات کی مد میں بھی مریضوں سے لوٹ مار کرتے ہیں،عوامی و سماجی حلقوں نے ڈپٹی ڈی ایچ او کبیروالا ڈاکٹر وسیم حیات کی کارکردگی کو سراہا،ہسپتال کو ڈی سیل کروانے کے لیے محکمہ پر پریشر جاری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں