“عمران خان کی پٹرول پر سبسڈی سے ماہانہ 120 ارب روپے کانقصان ہو رہا تھا” مفتاح اسماعیل کا دعویٰ

اسلام آباد(آن لائن ) وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ عمران خان نے پیٹرول پر سبسڈی دی جس سے ملک کو ماہانہ 120 ارب روپے کا نقصان ہو رہا تھا،عمران خان ملک کو دیوالیہ کی طرف لے کر گئے۔

اسلام آباد میں وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے نیوز کانفرنس کے دوران کہا کہ عمران خان اپریل میں جو ملک کی حالت چھوڑ کر گئے تھے وہ عوام کو بتانا چاہتے ہیں، پہلے 3سال میں پی ٹی آئی نے ہر سال 3ہزار500 ارب روپے کا خسارہ کیا، تحریک انصاف کے پونے 4 سال میں 21 ہزار ارب روپے کا قرضہ بڑھ گیا، ملکی تاریخ میں 25 ہزار ارب روپے قرض لیا گیا تھا، یہ ایک دن کی غلطی نہیں4 سال کی نااہلی تھی، عمران خان نے 4 سال میں اتنا قرض لے لیا، تحریک انصاف نے 4سالوں میں ملک کو بڑا خسارہ دیا۔وزیر خزانہ نے کہا کہ حکومت چلانے کا پورے سال کا خرچہ500ارب روپے ہے جبکہ حکومت کو پاور سیکٹر میں 1300 ارب روپے کا نقصان ہو رہا ہے،پاکستان میں گیس کی لوڈشیڈنگ نہیں سنی تھی، یہ بھی عمران خان کی وجہ سے ہے،تیل مہنگا ہونے پر عمران خان شمسی توانائی کی طرف نہیں گئے،عمران خان کے پہلے سال 9اعشاریہ ایک فیصد خسارہ تھا،بجٹ خسارہ ٹیکس محصولات کی کمی کے باعث بڑھا، بجٹ خسارے کیلئے کہیں سے رقم پوری کرنی پڑتی ہے،عمران خان نے 20 ہزار ارب روپے قرض بڑھایا ،کوئی ایک منصوبہ بھی لگایا ہے تو بتا دیں ، 4سال کی غلط پالیسیوں کےباعث آج یہاں کھڑے ہیں۔وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے مزید کہا کہ ہم نےملک کوڈیفالٹ ہونےسےبچایا، ہماری کوشش تھی ملک میں معاشی استحکام لائیں، ہم نے نیلم جہلم پراجیکٹ مکمل کیا ، تربیلا کا توسیعی منصوبہ لگایا ، ساہیوال میں پورٹ قاسم ، حب میں کوئلے کے پلانٹ لگائے ، ایل این جی کے ٹرمینل لگائے گئے ، بتایا جائے خان صاحب نے 20 ہزار ارب روپے قرض سے قوم کو کیا دیا ، ایک میگاواٹ کا پاور پلانٹ لگا یا؟، ایک کلو میٹر کوئی سڑک بنی ؟، کوئی پی آئی اے میں جہاز آیا ؟، کوئی بحری جہاز آیا ؟، کوئی ایک کلو میٹر ریلوے ٹریک بنایا ؟، کوئی پی کے ایل آئی بنایا ؟۔مفتاح اسماعیل نے مزید کہا کہ بجلی کے محکمے میں کوئی بہتری نہیں لائی گئی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں